بلاگ اردو میں کیوں…؟


میں نے اپنا بلاگ اردو زبان میں لکھنے کا فیصلہ اس لئے کیا ہے کہ میرے ملک پاکستان میں اکثر لوگ انگریزی نہیں پڑھ سکتے ۔ انگریزی میں جو مضامین، بلاگ اور کالم لکھے جاتے ہیں ان سے میرے اکثر ہم وطن محروم رہتے ہیں۔ اور ہمارے پڑھے لکھے لوگ اردو میں کچھ لکھنے کو تیار نہیں۔ سو ہمارے اردو پڑھنے والے لوگوں کو بس "موت کا منظر…مرنے کے بعد کیا ہوگا” قسم کی کتابیں ہی پڑھنے کو ملتی ہیں یاانہیں دجال کے فتنے کے متعلق یا قیامت کے آثار بتائے جاتے ہیں۔ اردو میں ہمارے روز مرہ کے مسائل کے حوالے سے کوئی بات پڑھنے کو نہیں ملتی۔ اگر روز مرہ کے مسائل پر کہیں بات ہو گی بھی تو اسے بھی دلائل کی بجائے فضولیات میں الجھا دیا جائے گا۔ مثال کے طور پر پچھلے سال کے سیلاب کے حوالے سے ہر کوئی یہی لکھ رہا ہو گا کہ جناب یہ گناہوں کی سزا ہے۔ اس سے پہلے زلزلے کے حوالے سے بھی یہی کہا گیا۔ حالانکہ ان واقعات کی توجیہ سائنس کی دنیا میں تلاش کرنی چاہئے تھی۔ اس صورت حال میں, میں یہ ضروری سمجھتا ہوں کہ اردو میں ان اہم موضوعات پر دلیل کے ساتھ بات کی جائے۔ اردو پڑھنے والے دوستوں کو بھی جذباتیت سے عاری، سائنسی دلائل اور حقائق پر مبنی بحث کا اتنا ہی حق ہے جتنا انگریزی پڑھنے والوں کو۔ جو دوست میرے مضامین پر تبصرہ کرنا چاہیں، ضرور کریں۔ اختلاف کریں، تاہم دلیل کا جواب دلیل سے دیں، کسی قسم کی بے ہودگی، گالی گلوچ اور بد زبانی کی گنجائش نہیں ہے۔ میں اس قسم کی زبان میں کی گئی گفتگو کا جواب دینا پسند نہیں کروں گا۔ ایسے تبصرے بھی غائب کر دئیے جائیں گے۔ (شکریہ)

Advertisements

3 خیالات “بلاگ اردو میں کیوں…؟” پہ

  1. آُ کا بلاگ اردو میں ہے اس کو قومی زبان ہونے کی وجہ قرار دیتے تو یقینآ دلی خوشی ہوتی
    جو انگریزی پڑھنا جانتے ہیں وہ آپ کے بلاگ پر آتے اس کی کوئی گارنٹی ضمانت دے سکتے ہیں آپ؟

    چلیئے جو بھی ہو

    مجھے خوشی ہے اردو میں اظہار خیال کر رہے ہیں۔۔

    شکریہ

    • قومی زبان کا معاملہ بہت ٹیڑھا ہے۔ اردو کو قومی زبان کس نے قرار دیا۔ ایک ایسی زبان جس کو پاکستان بنتے وقت ۹۹ فیصد پاکستانی نہیں سمجھتے تھے اور بنگلہ دیش بن جانے کے بعد بھی ۹۰ فیصد پاکستانیوں کو اس زبان سے کوئی واسطہ نہیں۔ اردو اگر پاکستان کی رابطے کی زبان رہے تو ٹھیک ہے (ویسے عملی طور پر اردو کا کردار اس وقت پاکستان میں رابطے کی زبان سے زیادہ نہیں)۔ تمام سرکاری معاملات تو انگریزی میں ہوتے ہیں۔ اپنی ذاتی محفلوں میں لوگ اپنی مادری زبانیں بولنا پسند کرتے ہیں (ماسوائے پنجابیوں کے)۔ اردو اُسی صورت میں بولی جاتی ہے جب مختلف علاقوں کے لوگ ایک جگہ اکٹھے ہوں۔

      رہی بات کہ انگریزی پڑھنے والے اس بلاگ پر آتے ہیں کہ نہیں، تو بات یہ ہے کہ اس پر آنے والوں میں سے اکثر انگریزی پڑھنا جانتے ہیں۔ پاکستان کے بعد سب سےزیادہ لوگ امریکہ، برطانیہ اور کینیڈا سے اس بلاگ پر آتے ہیں۔

  2. آپ کا بلاگ اردو میں ہے، بہت خوشی ہوئی۔ کیا یہ ممکن ہے کہ آپ خط نسخ کی بجاےؑ خط نستعلیق کا استعمال کریں؟ نسخ عربی اور فارسی کا خط ہے۔ شکریہ۔

جواب دیں

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s